پہلے سے مراسم نا سہی پھر بھی کبھی تو

Published on by KHAWAJA UMER FAROOQ

پہلے سے مراسم نا سہی پھر بھی کبھی تو
رسمِ راہِ دنيا ہی نبــھانے کے ليے آ

کس کس کو بتائيں گے جدائی کا سبب ہم
تُو مجھ سے خفا ہے تو زمـــانے کے ليے آ...

کچھ تو ميرے پندارِ محبت کا بھرم رکھ
تُو بھی تو مجھ کو مـــنانے کے ليے آ

ايک عمر سے ہوں لذتِ گِريہ سے بھی محروم
اے راحتِ جان مجھ کو رُلانے کے ليے آ

اب تک دلِ خوش فہم کو تجھ سے ہيں اميديں
يہ آخری شمعيں بھی بُجـــھانے کے ليے آ

Comment on this post