Overblog Follow this blog
Administration Create my blog
جس دیس کی کورٹ کچہری میں ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ انصاف ٹکوں پر بکتا ہو

جس دیس کی کورٹ کچہری میں ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ انصاف ٹکوں پر بکتا ہو

جس دیس سے مائوں بہنوں کو ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ اغیار اٹھاکر لے جائیں جس دیس سے قاتل غنڈوں کو ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ اشرار چھڑاکر لے جائیں جس دیس کی کورٹ کچہری میں ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ انصاف ٹکوں پر بکتا ہو جس دیس کا منشی قاضی بھی ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ مجرم سے پوچھکے...

Read more

اے گردشِ ایام ۔۔۔۔۔۔ میں کچھ سوچ رہا ہوں........عبد الحمید عدم

اے گردشِ ایام ۔۔۔۔۔۔ میں کچھ سوچ رہا ہوں........عبد الحمید عدم

ہے ابھی جام ۔۔۔۔۔ میں کچھ سوچ رہا ہوں اے گردشِ ایام ۔۔۔۔۔۔ میں کچھ سوچ رہا ہوں ساقی تجھے اِک تھوڑی سی تکلیف تو پو گی ساغر کو ذرا تھام ۔۔۔۔۔ میں کچھ سوچ رہا ہوں... پہلے بڑی رغبت تھی ۔۔۔۔۔ ترے نام سے مجھ کو اب سن کے ترا نام ۔۔۔۔۔۔ میں کچھ سوچ رہا ہوں ادراک...

Read more

فسق موتی کو بھی مٹی میں ملا دے لیکن........

فسق موتی کو بھی مٹی میں ملا دے لیکن........

فسق فساق کو بے کار بنا دیتا ہے عشق عشاق کو عطار بنا دیتا ہے فسق انساں کو چڑھاتا ہے سرِ دار مگر عشق انسان کو سردار بنا دیتا ہے... فسق ہاتھوں سے بناتا ہے بتانِ آزر عشق مولیٰ کا پرستار بنتا دیتا ہے فسق فاسق کو بناتا ہے فقط ہرجائی عشق عاشق کو وفادار بنا دیتا...

Read more

مجھ کو تھکنے نہیں دیتا یہ ضرورت کا پہاڑ........معراج فیض آبادی

مجھ کو تھکنے نہیں دیتا یہ ضرورت کا پہاڑ........معراج فیض آبادی

آج بھی گاؤں میں کچھ کچے مکانوں والےگھر میں ہمسائے کے فاقہ نہیں ہونے دیتے مجھ کو تھکنے نہیں دیتا یہ ضرورت کا پہاڑمیرے بچے مجھے بوڑھا نہیں ہونے دیتے ان اشعار کے خالق مشہور شاعر معراج فیض آبادی صاحب گزشتہ روز لکھنؤ میں انتقال کر گئے۔۔۔ انا للہ و انا الیہ...

Read more

اے چاند یہاں نہ نکلا کر

اے چاند یہاں نہ نکلا کر

اے چاند یہاں نہ نکلا کر بے نام سے سپنے دیکھا کر یہاں اُلٹی گنگا بہتی ہے... اس دیس میں اندھے حاکم ہیں نہ ڈرتے ہیں نہ نادم ہیں نہ لوگوں کے وہ خادم ہیں ہے یہاں پہ کاروبار بہت اس دیس میں گردے بکتے ہیں کچھ لوگ ہیں عالی شان بہت اور کچھ کا مقصد روٹی ہے وہ کہتے...

Read more

تری تلاش میں جاں سے گزرنے والا ہوں

تری تلاش میں جاں سے گزرنے والا ہوں

تری تلاش میں جاں سے گزرنے والا ہوں مجھے سنبھال کسی دم بکھرنے والا ہوں وہ اک سوال کہ جس کا کوئی جواب نہیں اُسی سوال کی تہہ میں اترنے والا ہوں مرا طریقہ ذرا مختلف ہے سورج سے...جہاں پہ ڈوبا وہیں سے ابھرنے والا ہوں جو ہوسکے تو ملاقات مجھ سے کر لینا تمہارے...

Read more

وہ دن کتنے اچھے تھے........محسن

وہ دن کتنے اچھے تھے........محسن

وہ دن کتنے اچھے تھے جب سب ساتھی سچے تھے سچی رت سچ بنتی تھی سچ کہتے سچ سنتے تھے سچ کے سوچ سمندر میں ...سچے پار اترتے تھے یار وہ قول ہی سچا تھا یار گھڑے تو کچے تھے ماں کی گود میں ہم نے بھی سچے حرف ہی سیکھے تھے ہم کو سچ نے مار دیا ورنہ ہم کب ایسے تھے اب...

Read more

قتل چھپتے تھے کبھی سنگ کی کے بیچ.......محسن

قتل چھپتے تھے کبھی سنگ کی کے بیچ.......محسن

قتل چھپتے تھے کبھی سنگ کی کے بیچ اب تو کھلنے لگے مقتل بھرے بازار کے بیچ اپنی پوشاک کے چھن جانے پہ افسوس نہ کر سر سلامت نہیں رہتے یہاں دستار کے بیچ ... سرخیاں امن کی تلقین میں مصروف رہیں حرف بارود اگلتے رہے اخبار کے بیچ کاش اس خواب کو تعبیر کی مہلت نہ...

Read more

شب و روز کی گردشوں کا تسلسل..........محسن نقوی

شب و روز کی گردشوں کا تسلسل..........محسن نقوی

کئی سال گزرے کئی سال بیتے شب و روز کی گردشوں کا تسلسل دل و جاں میں سانسوں کی پرتیں الٹتے ہوۓ زلزلوں کی طرح ہانپتا ہے ..!... چٹختے ہوۓ خواب آنکھوں کی نازک رگیں چھیلتے ہیں مگر میں ہر اک سال کی گود میں جاگتی صبح کو بے کراں چاہتوں سے اٹی زندگی کی دعا دے کے...

Read more

<< < 1 2 3 4 5 6 > >>