Overblog Follow this blog
Administration Create my blog

6 posts with allama iqbal

 ...ان تازہ خداؤں میں بڑا سب سے وطن ہے

...ان تازہ خداؤں میں بڑا سب سے وطن ہے

از علامہ محمد اقبال ان تازہ خداؤں میں بڑا سب سے وطن ہے جو پیرہن اس کا ہے ، وہ مذہب کا کفن ہے یہ بت کہ تراشیدۂ تہذیب نوی ہے غارت گر کاشانۂ دین نبوی ہے بازو ترا توحید کی قوت سے قوی ہے اسلام ترا دیس ہے ، تو مصطفوی ہے نظارۂ دیرینہ زمانے کو دکھا دے اے مصطفوی...

Read more

یہ چمن مجھ کو آدھا گوارا نہیں.........

یہ چمن مجھ کو آدھا گوارا نہیں.........

پھول لے کر گیا آیا روتا ہوا، بات ایسی ہے کہنے کا یارا نہیں، قبرِ اقبال سے آرہی تھی صدا،... یہ چمن مجھ کو آدھا گوارا نہیں۔ شہرِ ماتم تھا اقبال کا مقبرہ، تھے عدم کے مسافر بھی آئے ہوئے، خوں میں لت پت کھڑے تھے لیاقت علی، روحِ قائد بھی سر کو جھکائے ہوئے، کہہ...

Read more

یہ غازی ، یہ تیرے پراسرار بندے

یہ غازی ، یہ تیرے پراسرار بندے

یہ غازی ، یہ تیرے پراسرار بندے جنھیں تو نے بخشا ہے ذوق خدائی دو نیم ان کی ٹھوکر سے صحرا و دریا سمٹ کر پہاڑ ان کی ہیبت سے رائی دو عالم سے کرتی ہے بیگانہ دل کو عجب چیز ہے لذت آشنائی شہادت ہے مطلوب و مقصود مومن نہ مال غنیمت نہ کشور کشائی

Read more

جوشاخ نازک پہ آشیانہ بنے گا ، ناپائدار ہو گا

جوشاخ نازک پہ آشیانہ بنے گا ، ناپائدار ہو گا

سنا دیا گوش منتظر کو حجاز کی خامشی نے آخر جو عہد صحرائیوں سے باندھا گیا تھا ، پھر استوار ہو گا نکل کے صحرا سے جس نے روما کی سلطنت کو الٹ دیا تھا سنا ہے یہ قدسیوں سے میں نے ، وہ شیر پھر ہوشیار ہو گا کیا مرا تذکرہ جوساقی نے بادہ خواروں کی انجمن میں تو پیر...

Read more

یہ چمن مجھ کو آدھا گوارہ نہی

یہ چمن مجھ کو آدھا گوارہ نہی

پھول لے کر گیا ،آیا روتا ھوا بات ایسی کہ کہنے کا یارا نہی قبر اقبال سے آرہی تھی صدا یہ چمن مجھ کو آدھا گوارہ نہی شہر ماتم تھا اقبال کا مقبرہ...خون میں لت پت کھڑے تھے لیاقت علی روح قائد بھی سر کو جھکائے ہوئے کہ رہے تھے یہ کیا غذب ہو گیا یہ تصور تو ہرگز...

Read more

یہی مقصود فطرت ہے، یہی رمز مسلمانی.........انتخاب از طلوع اسلام - علامہ اقبال

یہی مقصود فطرت ہے، یہی رمز مسلمانی.........انتخاب از طلوع اسلام - علامہ اقبال

انتخاب از طلوع اسلام - علامہ اقبال ===================== یہی مقصود فطرت ہے، یہی رمز مسلمانی اخوت کی جہاں گیری، محبت کی فراوانی بتان رنگ و خوں کو توڑ کر ملت میں گم ہو جا نہ تورانی رہے باقی، نہ ایرانی، نہ افغانی میان شاخساراں صحبت مرغ چمن کب تک! ترے بازو...

Read more